بڑی بیٹھک، مساجد کے لیئے بنائے گئے ایس او پیز پر بات چیت

انس ملک اسلام آباد سے: صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی، وزیراعظم عمران خان اور ڈی جی آئی ایس لیفٹننٹ جنرل فیض کی اسلام آباد میں خصوصی بیٹھک ہوئی۔ اس میں خطے کی مجموعی صورتحال ، بیرونی اور اندرونی چیلنجز اور کرونا وائرس کی صورتحال سے نمٹنے کے پالیسیوں پر بات ہوئی۔ سرکاری طور پر جاری کی گئی خبر میں بتایا گیا کہ علما کے ساتھ مساجد کے لیئے طے کئے گئے اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیجرز پر بات چیت ہوئی۔

پاکستان میں اس وقت بڑا چیلنج رمضان میں ایس او پیز پر عمل کرانا ہے کیونکہ اکثریتی آبادی مساجد میں تراویح کے لیئے جاتی ہے۔ اور اگر ایس او پیز پر عمل نہ ہوا تو کرونا وائرس کے پھیلنے کی شرح خطرناک حد تک بڑھ سکتی ہے۔

وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان کا کہناہے کہ وزیراعظم عمران خان نے ملک کےمختلف صوبوں میں لاک ڈاؤن کے معاملے پر گرفتار آئمہ مساجد اور نمازیوں کو اب تک رہا نہ کیے جانے کا نوٹس لیا ہے۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ وزیراعظم نے اعلان کیا ہے کہ جس بھی صوبے یا شہر میں علماء حضرات گرفتار ہیں انہیں فوری رہا کیا جائے۔

بڑی بیٹھک میں صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے امید ظاہر کی کہ حکومت اس بحران میں ہر پاکستانی کو مدد فراہم کرے گی۔

اجلاس میں بھارت کی طرف سے مسلسل سرحدوں کی خلاف ورزی اور مقبوضہ جموں کشمیر کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر تفصیل سے بات ہوئی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں