پاکستان کو 10ارب ڈالر کی بچت، آئی ایم ایف سے1ارب36کروڑ ڈالرقرضے کی منظوری

رضوان عامر کراچی سے: پاکستان کو آئی ایم ایف سے ایک ارب 36کروڑ ڈالر کا پیکیج مل گیا دوسری طرف جی20ممالک کی طرف سے قرضوں کی ادائیگی منجمد کرنےسےپاکستان کو 10ارب ڈالر کی بچت ہوگی۔

مشیر خزانہ ڈاکٹر حفیط شیخ پر امید ہیں کہ اس رقم کا اجرا بھی فوری متوقع ہے۔ اسطرح پاکستان کو ریلیف کاموں میں بہت فائدہ ہوگا۔ آئی ایم ایف سے قرضہ ملنے کے بعد پاکستان سعودی عرب یو اے ای پیرس کلب سمیت کئی ممالک سے قرضوں کو ایک سال کےلیئے منجمند کرنے کی بات چیت شروع کرے گا

دوسری طرف جی 20ممالک نے پاکستان سمیت 76ممالک کے قرضوں کی ادائیگی ایک سال کے لیئے منجمند کرنے کی مںظوری دیدی ہے

ماہرین کے مطابق اس سال پاکستان کو دس ارب ڈالر کے قرضے اور قسطوں کی ادائیگیاں کرنی تھیں جو جی 20ممالک کی طرف سے ادائیگیاں منجمد کرنے سے پاکستان کو اب نہیں کرنی ہوں گی۔

جی 20ممالک کو ترقی پذید ممالک نے40ارب ڈالرکی اس سال ادائیگی کرنی تھی جب آئی ایم ایف نے ان ممالک سے رابطہ کیا تو ان ممالک نے ان قرضوں کو ایک سال کے لیئے منجمند کرنے کی منظوری دیدی۔ ان ممالک میں سب سے بڑی رقم سعودی عرب کو ان ممالک نے ادا کرنی تھی جو20ارب ڈالر تھی۔

اسٹیٹ بینک نے دو فیصد شرح سود کم کردی جس کے بعد ملکی بینکوں کو ادا کرنے قرضے کی رقم میں بھی بچت ہوگی۔ ڈاکٹر حفیظ پاشا کے مطابق تقریبا ایک ہزار ارب روپے کی بچت دو فیصد شرح سود کم کرنے سے ہوئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں