حکومت نے سینیٹائزرز، عام ماسک کی ایکسپورٹ کی اجازت دیدی

وزارت تجارت نے سینیٹائزرز اور عام ماسک کی ایکسپورٹ کی اجازت دیدی ہے۔ تاہم سرجیکل ماسک اور این95ماسک کی ایکسپورٹ پر پابندی ہوگی۔

وزارت تجارت کے ذرائع کے مطابق ٹیسکٹائل سیکٹر بڑی تعداد میں عام ماسک تیار کررہا ہے اسوقت ماسک کی پروڈکشن ملکی ضرورت سے زیادہ ہے جبکہ ان ماسک کی عالمی ڈیمانڈ میں اضافہ ہوا اس لیئے حکومت نے ان ماسک کی ایکسپورٹ کی اجازت دیدی ہے

اسی طرح سینیٹائزرز کی پروڈکشن بھی بڑی تعداد میں ہورہی ہے اورسینیٹائزر کی عالمی مارکیٹ میں بڑی طلب ہے جس کے بعد سینیٹائزرز کی ایکسپورٹ کی اجازت دیدی ہے۔

تاہم پاکستان میں ابھی بھی سینیٹائزرز خاصے مہنگے داموں میں فروخت ہورہا ہے۔ جو سینیٹائزرز پچاس سے سوروپے میں کروناوبا شروع ہونے سے پہلے دستیاب تھا وہ کرونا وائرس کی وجہ سے اب کم ازکم ڈھائی سو روپے کا دستیاب ہے

اس ایکپسورٹ کے بعد کہیں مارکیٹ میں قلت پیدا نہ ہو اس کے لیئے حکومت کو اقدامات کرنے ہوں گے۔ صارفین کا کہنا ہےکہ اس موقع پر ایکسپورٹ کی اجازت دینے سے ملک میں سینیٹائزرز کی قلت اور قیمتوں میں اضافے کا اندیشہ ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں