کراچی کے کئی علاقے سیل، لاہور میں بھی سختی، کرونا وائرس کے متاثرین کی تعداد میں خطرناک حد تک اضافہ

کراچی، لاہور سمیت ملک کے کئی علاقوں کو کرونا وائرس کے شکار افراد کی موجودگی کے بعد سیل کیا گیا ہے۔ کراچی کے بیالیس علاقے خطرناک قرار دیئے گئے ہیں جبکہ لاہور سمیت پنجاب میں سو کے قریب ہاٹ اسپاٹ ہیں۔ تاہم پنجاب میں ابھی علاقے سیل کرنے کا عمل سست روی کا شکار ہے۔ کراچی میں ہفتے کے روز سندھ حکومت نے کئی یونین کونسلز کو سیل کرنے کا حکم جاری کیا تھا جو بعد میں واپس لیا گیا۔ لیکن اسوقت بھی بیالیس علاقے ہاٹ اسپاٹ ہیں جبکہ چند علاقوں کو سیل کیا گیا ہے۔ شاہ فیصل کالونی کے کچھ حصے، جمشید کوارٹرز ، گلشن اقبال، سائٹ ایریا، لیاری، کیماڑی، کورنگی میں موجود چند بستیوں کو سیل کیا گیا ہے۔ پاکستان میں کرونا وائرس کے شکار افراد کی تعداد میں یکایک اضافہ ہوا ہے۔ اسوقت کرونا وائرس کے شکار افراد کی تعداد پانچ ہزار سے تجاوز کرچکی ہے۔ جبکہ خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ اس ہفتے کرونا وائرس کےمریضوں کی تعداد دگنی ہوسکتی ہے۔ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ یہ مریض پہلے سے موجود ہیں ان کی تعداد میں اضافہ اسلیئے نظر آرہا ہے کہ اب ٹیسٹنگ کٹس موجود ہیں جن سے مریضوں کا علم ہورہا ہے۔ پہلے ٹیسٹنگ کٹس ناکافی تھیں اس لیئے کرونا سے متاثر افراد پکڑ میں نہیں آرہے تھے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں