پروفیسر سے لڑنے مرزا اب کبھی بھی نہیں آئیں گے

کراچی: عمر شریف کے مشہور اسٹیج ڈرامہ بکرا قسطوں میں مرزا کا کردار ادا کرنے والے مرزا اخترشیرانی انتقال کرگئے

بکرا قسطوں پر اپنے وقت کا مشہور ترین اسٹیج ڈرامہ تھا جس کی ویڈیو کیسٹ اور آڈیو کیسٹ بھی فروخت ہوتی تھی۔ اس ڈرامہ میں عمر شریف جو ایک غائب دماغ پروفیسر ہیں ان کے پڑوسی مرزا کا کردارمرزا اختر شیرانی نے کیا تھا۔ عمر شریف اور مرزا کی جوڑی اسقدر مشہور ہوئی کہ وہ اس کے بعد بھی کئی ڈراموں میں ساتھ آتے رہے۔لیکن اب یہ جوڑی ٹوٹ گئی ہے۔ اب پروفیسر کی پتلون اڑ کر مرزا کے گھر چلی جائے گی تو مرزا لڑنے کے لیئے نہیں آئیں گے

کراچی کی اسٹیج کی دنیا میں اختر شیرانی، شکیل صدیقی، سلومی، نعیمہ گرج عمر شریف کے ڈراموں میں اہم کردار ادا کرتے تھے ۔ معین اختر اور جمشید انصاری بھی ان ڈراموں کی جان ہوتے تھے۔ ایک ڈرامہ میں لہری صاحب بھی شریک ہوئے جن کا مشہور ڈائیلاگ آداب آداب لوگوں کو بہت بھایا۔

کراچی کی بدامنی اور عمر شریف کی لاہور ہجرت کے بعد کراچی کا اسٹیج خاصہ ویران ہوگیا تھا۔ کمرشل اسٹیج ڈراموں کے زوال کی وجہ بڑے تھیٹر کا ٹوٹ کر شاپنگ پلازہ بن جانا بھی تھا۔

بکرا قسطوں پر پارٹ ون اور پارٹ ٹو، بڈھا گھر پر ہے جیسے ڈرامے سن اسی کی دہائی میں اسٹیج کیئے گئے یہ ڈرامے اور ان کے کردار تیس پینتیس سال بعد آج بھی دیکھنے والوں کے زہن میں زندہ ہیں ۔ یوٹیوب پر ان کے ویوز کی تعداد ہر روز بڑھ جاتی ہے۔ لوگوں کو نہیں محسوس ہوتا کہ وقت بدلا ہے۔ کیونکہ مسائل ابھی تک وہی کہ وہی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں