چین سے تجارتی لڑائی میں امریکی کمپنیوں کو ایک کھرب 70ارب ڈالر کا نقصان

نیوز ڈیسک: امریکا کے سرکاری محکمہ نیشنل بیورو آف ریسرچ کی رپورٹ میں اعتراف کیا گیا ہے کہ چین سے تجارتی لڑائی میں امریکی کمپنیوں کو اسٹاک مارکیٹ میں ایک کھرب ستر ارب ڈالر کا نقصان ہوا ہے۔

ریسرچ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صدر ٹرمپ کی طرف سے بڑھانے کے فیصلے اور چین کی طرف سے جوابی کارروائی کے نتیجہ میں امریکی کمپنیوں کو اسٹاک مارکیٹ میں ایک کھرب ستر کروڑ ڈالر کا نقصان اٹھانا پڑا۔ روپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چین اور امریکا کی کمپنیوں کی ایکدوسرے کے ممالک میں سیلز کا فرق بہت زیادہ نہیں ہے۔ دوہزار سترہ میں امریکی کمپنیوں نے چین میں505ارب ڈالر کا سامان فروخت کیا جبکہ چین کی کمپنیوں نے امریکا میں 570ارب ڈالر کا سامان فروخت کیا ۔ اسطرح دونوں ممالک کی کمپنیوں کے مفادات کو اس جنگ سے برابر کا نقصان پہنچا ہے۔

عالمی ماہرین کے مطابق چین اور امریکا کی تجارتی جنگ کے نتیجہ میں دونوں ممالک کی کمپنیاں کاروبار کو منافع بخش رکھنے اور ایکدوسرے کی مارکیٹوں میں پرانے ٹیکسوں کے نظام کے تحت رسائی رکھنے کے لیئے مختلیف طریقے سوچ رہی ہیں۔ ماہرین کے مطابق توقع کی جارہی ہے کہ امریکا اور چین کی کمپنیاں دیگر ممالک میں اپنے پروڈکشن یونٹ لگائیں اور وہاں سے سامان اس ملک کی مہر لگا کر فروخت کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں